معاشرت - طلاق و خلع

Pakistan

سوال # 147554

میرے بھائی نے اپنی بیوی کو فون پر بیوی کے چچا کو گواہ بناکر ایک طلاق دی ، وہ بیرون ملک تھے، ایک مہینہ بعد پاکستان آئے اور اپنے سسرال گئے اور اپنے رجوع کا اعلان اپنی ساس، سسر،سالے اور بیوی کے چچا کی موجودگی میں کیا، جبکہ اس کی بیوی موجود نہیں تھی۔ مزید یہ کہ تین طہر کے اندر اس نے اسٹیمپ پیپر پر ایک اقرار نامہ کورٹ میں دو گواہوں کی موجودگی میں حلفیہ اقرار کے ساتھ حلف دلانے والے کمشنرکے سامنے کیا کہ اس نے رجوع کیا۔ اس کے سسرال والوں کی رائے ہے کہ رجوع بیوی کے آمنے سامنے نہیں ہوا، اس لیے یہ مکمل نہیں ہوا۔
برائے مہربانی مجھے بتلائیں کہ آیا اس کا رجوع صحیح ہوا یا نہیں؟

Published on: Jan 31, 2017

جواب # 147554

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 366-381/Sn=5/1438



رجوع کے لیے بیوی کا سامنے موجود ہونا ضروری نہیں ہے؛ اس لیے آپ کے بھائی نے جو رجوع کیا ہے وہ شرعاً صحیح ہوگیا، ان کے سسرال والوں کی بات صحیح نہیں ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات