عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 167903

ہماری مسجد میں امام صاحب نے مقتدیوں کی نماز صحیح کرانے کے لئے یہ طریقہ شروع کیا ہے کہ فجر کی نماز کے بعد دعا سے پہلے کچھ دن تک ثنا کہلواتے ہیں پھر کچھ دن تک صورة فاتحہ پھر کچھ دن کوئی چھوٹی صورت اور ساتھ میں رکوع و سجدہ کی تسبیح اور کچھ دن التحیات۔ امام صاحب محراب میں بیٹھے بیٹھے مائک پر نماز کہلواتے ہیں اور سب مقتدی ان کے کہے الفاظ دہراتے ہیں۔ کلمات کو دو تین مرتبہ دہرایا جاتا ہے ۔ اس صورت میں جو حضرات نماز سے فارغ ہو چکے ہوتے ہیں وہ تو نماز دہرا رہے ہوتے ہیں لیکن جو حضرات دیر سے آتے ہیں وہ اس وقت نماز پڈھ رہے ہوتے ہیں اور ساری مسجد میں نماز کی تکرار کی آواز چھائی رہتی ہے ۔ کیا اس طرح کی اجتماعی شکل نماز کہلوانے کے لئے شرعاً درست ہے ؟

Published on: Jan 13, 2019

جواب # 167903

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 490-430/M=05/1440



نماز صحیح کرانا، مستحسن عمل ہے لیکن مذکورہ طریقہ مناسب نہیں ہے فجر میں سلام پھیرنے کے بعد دعا سے پہلے لوگ تسبیحات میں اور مسبوقین اپنی فوت شدہ رکعات کی ادائیگی میں مشغول رہتے ہیں، اُس وقت مائیک سے الفاظ و کلمات کہلوانے میں مسبوقین کی نماز میں خلل ہوگا اور جو لوگ نماز سے فارغ ہوتے ہیں اُن کی تسبیحات پوری ہونے سے رہ جائیں گی۔ اس لئے بہتر طریقہ یہ ہے کہ دعا سے فارغ ہونے کے بعد نماز سکھائی جائے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات