معاشرت - اخلاق و آداب

India

سوال # 161199

حضرت مفتی صاحب! کیا بیوی کا ساس اور سسر کی خدمت کرنا فرض ہے یا نہیں؟ شریعت میں اس کا کیا حکم ہے؟

Published on: May 5, 2018

جواب # 161199

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1046-920/L=8/1439



بیوی پر ساس اور سسر کی خدمت فرض تو نہیں ہے تاہم ان کے ساتھ والدین جیسا معاملہ کرنا بیوی کا اخلاقی فریضہ ہے؛ البتہ سسر کی جسمانی خدمت سے احترازکرنا چاہیے کہ اس سے زوجین کے رشتے کی خرابی کا اندیشہ ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات