معاملات - سود و انشورنس

India

سوال # 156703

بینک میں کچھ رقم رکھنے پر بینک کی طرف سے انعام ملتاہے تو کیا اس انعام کو لینا جائز ہے؟ مثلاً عمان میں مسقط میں ایک بینک ہے، اگر میں اپنے اکاؤنٹ میں ایک سو ریال رکھوں تو بینک والے میرے اکاؤنٹ کو ایک ہزار ریال کے لکی ڈرا میں شامل کرلیتے ہیں اورہر مہینہ ڈرا ہوتاہے اور بینک والے از خود ایسے اکاؤنٹ کو منتخب کرتے ہیں جس میں ایک سو ریال رہتاہے ۔
سوال یہ ہے کہ کیایہ انعام لینا جائزہے؟براہ کرم، رہنمائی فرمائیں۔ جزاک اللہ خیرا

Published on: Dec 21, 2017

جواب # 156703

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:355-312/L=3/1439



یہ زائد ملنے والی رقم سودی رقم ہے؛لہذا اس کا لینا جائزنہیں۔ کل قرض جر منفعة حرام․



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات