• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 6882

    عنوان:

    مفتی صاحب میرا سوال ہے کہ زید کہتا ہے اللہ فیصلے آسمانوں پر بیٹھ کر کرتے ہیں۔ تو ایسے شخص کے بارے میں کیا حکم ہے؟ بکر کہتا ہے کہ یہاں پر اللہ کے لیے سمت اورجہت ثابت کی جا رہی ہے اور فقہ کی کتابوں میں اسے کفر قرار دیا گیا ہے۔ تو برائے کرم جلدی جواب عنایت فرماکر مسئلہ حل فرماویں۔

    سوال:

    مفتی صاحب میرا سوال ہے کہ زید کہتا ہے اللہ فیصلے آسمانوں پر بیٹھ کر کرتے ہیں۔ تو ایسے شخص کے بارے میں کیا حکم ہے؟ بکر کہتا ہے کہ یہاں پر اللہ کے لیے سمت اورجہت ثابت کی جا رہی ہے اور فقہ کی کتابوں میں اسے کفر قرار دیا گیا ہے۔ تو برائے کرم جلدی جواب عنایت فرماکر مسئلہ حل فرماویں۔

    جواب نمبر: 6882

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 926=846/ ل

     

    اگر زید، اللہ کے لیے سمت اور جہت ثابت کیے بغیر یہ بات کہتا ہے تو اس میں کوئی قباحت نہیں ہے: قال في شرح الحکمة النبویة: نعتقد بأنہ علی العرش مستوٍ علیہ استواءً منزھًا عن التمکن والاستقرار وأنہ فوق العرش مع أنہ قریب من کل موجود وھو أقرب من حبل الورید (والتفصیل في فتاوی مولانا عبد الحئ)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند