عبادات - صوم (روزہ )

Pakistan

سوال # 152343

کیایہ طریقہ درست ہے کہ گھرمیں جوکھانے پینے کی اشیاء افطاری کے وقت اپنے لیے تیارکی جاتی ہے ان کے بارے میں اللہ سے دعاکیجائے کہ یااللہ اس کھانے کاثواب میری والدہ مرحومہ کوعطافرما پھرخود ہی کھالیاجائے ،کیااس کاثواب والدہ کو ہوگا؟

Published on: Jul 9, 2017

جواب # 152343

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 898-752/D=9/1438



بعض کام براہ راست عبادت اور ثواب کے ہوتے ہیں جیسے نماز، تلاوت اور غریب کو کھانا کھلانا۔ اس کا ثواب دوسرے کو بلا کسی تردد کے پہونچایا جاسکتا ہے۔



بعض کام براہ راست تو عبادت نہیں مباح اور جائز کام ہیں لیکن عبادت کا ذریعہ یا واسطہ ہوتے ہیں حسن نیت کی وجہ سے اس میں ثواب ملتا ہے۔



جیسا کہ حضرت ابوموسیٰ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ انہوں نے حضرت معاذ سے (جب کہ زمانہ حکومت یمن میں دونوں ملے تھے) فرمایا کہ تم کس کیفیت سے (شب کو نمازیں) قرآن پِڑھتے ہو؟ انہوں نے فرمایا کہ میں تو سوتا ہوں پھر اٹھتا ہوں پھر (نمازیں) قرآن پڑھتا ہوں (ساری رات بیدار نہیں رہتا) اور میں اپنے سونے میں ویسا ہی ثواب سمجھتا ہوں جیسا کہ اپنی شب بیداری میں سمجھتا ہوں (روایت کیا اس کو بخاری ، مسلم، ابوداوٴد اور نسائی التکشف عن مہمات التصوف، ص: ۳۵۱) ۔



روزہ ایک عبادت ہے اس کی تکمیل افطار سے ہوتی ہے لہٰذا افطار ایک عبادت کی تکمیل کا ذریعہ ہے اگر واقعی دل سے ایسی ہی نیت اور عبادت کی تکمیل کا خیال ہے تو اس پر بھی ثواب ملے گا جسے آدمی دوسرے کو بخش بھی سکتا ہے لیکن حظوظ نفس اور طبعی تقاضوں کی تکمیل کے بجائے صرف عبادت کی تکمیل کی کیفیت ہونی چاہئے اللہ تعالی سراسر اور دل کے ارادوں کو جانتے ہیں، صرف بات بنانا نہ ہونا چاہئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات