معاملات - حدود و قصاص

India

سوال # 2295

ایک بہت اہم مسئلہ ہے جس پر پورے محلہ میں کشیدگی ہے؛ اس لیے اس کا جواب جلد دیں ، مہربانی ہوگی۔مسجد کے دادر ہیں جس کے بارے میں پتہ چلا ہے کہ وہ کام کرواتے ہیں جو ایک عورت کے ساتھ ہوتا ہے، مطلب یہ کہ وہ کام جو لوط علیہ السلام کی قوم میں عام ہوگیا تھا۔ چشم دید گواہ ہیں۔ تو اس کے لیے کیا حکم ہے؟ وہ مسجد میں بھی آتے ہیں ۔

Published on: Sep 10, 2007

جواب # 2295

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوى: 882/ب=826/ب


 


جہاں تک قوم لوط کے فعل میں ملوث ہونے کا مسئلہ ہے تو اس کی خباثت اور حرمت میں کوئی کلام نہیں۔ ہر ایک جانتا ہے۔ اب رہا آگے کا مسئلہ تو آپ حضرات کا فرض ہے کہ اسے نرمی اور محبت و پیار سے سمجھائیں، کیا عجب ہے کہ کل یا پرسوں آپ حضرات کے سمجھانے سے وہ اپنے فعل بد سے سچی پکی توبہ کرلے۔ اب رہا اس کا مسجد میں نماز پڑھنے کے لیے آنا تو اس کام سے کسی مسلمان کو روکنا جائز نہیں۔ بہت ممکن ہے کہ نماز پڑھنے کی برکت سے اس جا یہ عیب دور ہوجائے۔


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات