India

سوال # 18939



میں ایک طالب علم ہوں تھوڑا تبلیغی
جماعت سے جڑا ہوا ہوں۔ میں نے ایک کمپنی کا شئیر خریدا ہے ۔وے ٹو لائف کمپنی سات
ہزار کا شیئر ایک سو پچاس دن کے لیے دیتی ہے اور ایک سو چالیس روپئے روزانہ دیتی
ہے اس حساب سے ایک سو پچاس دن میں اکیس ہزار روپئے دیتی ہے۔ کمپنی کے ڈوبنے کا بھی
خطرہ ہے۔ تو کیا یہ پیسہ جائز ہے یا نہیں؟ جلدی بتادیں گے تو مہربانی ہوگی۔



Published on: Jan 19, 2010

جواب # 18939

بسم الله الرحمن الرحيم



فتوی(ھ): 143=136-2/1431



 



یہ معاملہ جو آپ کے اور وے ٹو لائف
کمپنی کے مابین طے ہے، سودی معاملہ ہے جو حرام ہے۔




واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات