معاملات - حدود و قصاص

India

سوال # 19912

ایک گہرا مسئلہ ہے شرعی جواب سے نوازیں۔ ایک عورت جو اپنے پہلے شوہر سے طلاق لے چکی ہے، اور اپنے گزارے کے بہانے ایک کافر کے ساتھ اس کی آفس میں کام کرنے لگتی ہے والدین اور بھائیوں کی بات نہیں مانتی،پھر کئی سال بعد اپنے بھائیوں کی تسلی کے لیے خود سے ایک رشتہ تلاش کرکے دوسری شادی کرلیتی ہے شادی کے ایک سال بعد (حمل سے ہے) پھر دوسرے شوہر سے بھی طلاق لینا چاہتی ہے۔ پتہ چلتا ہے وہ کافر اس عورت سے مندر میں شادی کرچکا ہے۔ اور اس کے حمل پر شک (ثابت ہوسکتا ہے ڈی این اے ٹیسٹ کے ذریعہ) ہو رہا ہے کہ وہ اسی کافر کا ہے۔ اب ایسی بد اخلاق عورت کا انڈیا جیسے ملک میں کیا حکم ہے؟ اس کے ساتھ کیا سلوک کرسکتے ہیں؟ اس کی کیا سزا ہے؟ برائے مہربانی فتوی دیں۔

Published on: Mar 8, 2010

جواب # 19912

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی(ل): 308=232-3/1431


 

ہندوستان میں حدود، قصاص تعزیرات وغیرہ کا نفاذ نہیں ہوسکتا۔ البتہ اگر وہ عورت واقعی ایسی ہے جس طرح سوال میں اس کے احوال مذکور ہیں تو اہل محلہ وبرادری کے لوگ اس سے قطع تعلق کرسکتے ہیں۔

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات