• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 67773

    عنوان: جو زیور استعمال میں ہو کیا اس پر زکاة ہے؟

    سوال: ایک عورت کے پاس دس تولہ سونا ہے اور وہ اس کے استعمال میں ہے یعنی اس کے زیور بنا کر پہن رہی ہے تو کیا اس عورت پر زکٰوة واجب ہوگی؟ اگر ہوگی تو کون ادا کرے گا؟

    جواب نمبر: 67773

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1030-1054/N=10/1437 (۱، ۲): سونے چاندی کے زیورات اگرچہ استعمالی ہوں تب بھی ان کی زکوة واجب ہوتی ہے؛ اس لیے سوال میں مذکور عورت پر زکوة واجب ہوگی اور اس کی زکوةخود اس پر واجب ہوگی، اس کے شوہر یا والد وغیرہ پر نہیں، البتہ اس کا شوہر یا والد اپنی مرضی وخوشی سے اس کی اجازت سے اس کی زکوة ادا کردے تو زکوة ادا ہوجائے گی اور یہ شوہر یا والد کی طرف سے عورت (بیوی/بیٹی)پر احسان ہوگا، واللازم … مضروب کل منھما ومعمولہ ولو تبراً أو حلیاً مطلقاً مباح الاستعمال أو لا ولو للتجمل والنفقة ؛لأنھما خلقا أثماناً فیزکیھما کیف کانا (الدر المختار مع رد المحتار، کتاب الزکاة، باب زکاة المال ۳: ۲۲۷، ۲۲۸، ط: مکتبة زکریا دیوبند)۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند