• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 66150

    عنوان: انجانے میں پی ایف اور پلاٹوں کی زکاة ادا کردی تھی

    سوال: میں نے پچھلے سالوں انجانے میں پی ایف اور پلاٹوں کی زکاة ادا کردی تھی ، بعد میں معلوم ہوا کہ ان اثاثوں پر زکاة نہیں ہے تو کیا میں پچھلے سالوں ادا کی گئی زکاة کی رقم کو امسال کی زکاة میں یا مستقبل کی زکاة ایڈجسٹ(برابر/منہا) کرسکتاہوں ؟

    جواب نمبر: 66150

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1006-1006/M=10/1437

    اگر پلاٹ بیچنے کی نیت سے نہیں خریدے تھے تب تو ان پر زکوة نہیں تھی لیکن اگر فروخت کرنے کی نیت سے خریدے تھے تو ان پر زکوة تھی، بہرحال جن اثاثوں پر زکوة نہیں تھی اور آپ نے ان کی زکوة نکال دی تھی تو صدقہ یا عطیہ کا ثواب حاصل ہوگیا۔ اب امسال کی زکوة میں پچھلے سال ادا کی گئی زکوة کی رقم کو محسوب (شمار) نہیں کرسکتے، امسال اگر زکوة واجب ہے تو الگ سے زکوة نکالنی ہوگی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند