• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 62894

    عنوان: میں رمضان میں اپنی پھوپھی کے گھر میں تھا، وہاں سے عید میں اپنے گھر آنے لگا، میری پھوپھی نے مجھے دوسو روپئے دیئے اور کہا کہ دادی کو دیدینا، جن کو پیسے دینے تھے وہ میری پردادی سوتیلی لگی اور میری پھوپھی بھی سوتیلی دادی لگی، مگر وہ پیسے ذاتی خرچ میں خرچ ہوگیا اور میں دادی جان کو بھی نہیں بتا سکا کہ پھوپھی نے آپ کو پیسہ دیا ہے، میرے لوٹانے سے پہلے ہی عید بعد کچھ دن کے اندر دادی اپنے مالک حقیقی سے جاملیں، وہ پیسہ زکاة ،صدقہ ، یا ہدیہ تھا مجھے کچھ نہیں معلوم ہے، اب میں اس پیسے کا کیا کروں؟ ان کے نام سے مدرسہ میں دیدوں یا ان کے ورثہ کو دیدوں جو حالات سے مجبور بھی ہیں۔ بہتر رہنمائی فرمائیں۔ ویسے الحمد للہ وقت بہ وقت دادی کے ورثہ جو میرے داد بھی لگتے ہیں رشتے میں مدد کرتے رہتے ہیں، مگر اس پیسے کا معاملہ کیا کروں؟ مجھے بہت بے چینی اس معاملہ کو لے کر ؟جزاک اللہ

    سوال: میں رمضان میں اپنی پھوپھی کے گھر میں تھا، وہاں سے عید میں اپنے گھر آنے لگا، میری پھوپھی نے مجھے دوسو روپئے دیئے اور کہا کہ دادی کو دیدینا، جن کو پیسے دینے تھے وہ میری پردادی سوتیلی لگی اور میری پھوپھی بھی سوتیلی دادی لگی، مگر وہ پیسے ذاتی خرچ میں خرچ ہوگیا اور میں دادی جان کو بھی نہیں بتا سکا کہ پھوپھی نے آپ کو پیسہ دیا ہے، میرے لوٹانے سے پہلے ہی عید بعد کچھ دن کے اندر دادی اپنے مالک حقیقی سے جاملیں، وہ پیسہ زکاة ،صدقہ ، یا ہدیہ تھا مجھے کچھ نہیں معلوم ہے، اب میں اس پیسے کا کیا کروں؟ ان کے نام سے مدرسہ میں دیدوں یا ان کے ورثہ کو دیدوں جو حالات سے مجبور بھی ہیں۔ بہتر رہنمائی فرمائیں۔ ویسے الحمد للہ وقت بہ وقت دادی کے ورثہ جو میرے داد بھی لگتے ہیں رشتے میں مدد کرتے رہتے ہیں، مگر اس پیسے کا معاملہ کیا کروں؟ مجھے بہت بے چینی اس معاملہ کو لے کر ؟جزاک اللہ

    جواب نمبر: 62894

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 213-161/D=3/1437-U جب پھوپھی کے کہنے کے مطابق آپ دادی کو پیسے نہیں دے سکے اور ان کا انتقال ہوگیا تو آپ پھوپھی کو وہ رقم واپس کردیں اگر صورت حال ظاہر کرنے میں دشواری یا شرمندگی کا خطرہ ہے تو کسی بھی طریقہ پر وجہ بتلائے بغیر اگر آپ رقم ان تک پہنچا دیتے ہیں خواہ ہدیہ کہہ کر تو بھی آپ بری الذمہ ہوجائیں گے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند