• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 604720

    عنوان:

    زكاۃ كل مال پر ادا كی جائے گی یا صرف نصاب سے زائد پر؟

    سوال:

    ۱) اگر سونا ساڑھے سات تولہ یا اس سے کم قیمت کا ہے کیا زکوة چاندی قیمت کے مطابق ادا کرنا ہے یا سونے کی قیمت کے مطابق۔

    ۲) زکوٰة پورے سونا یا چاندی جو نصاب پر پہنچتی ہو اس پر ادا کرنا ہے یا اس سے زائد ہونے پر ہی زکوٰة دینا ہوگا؟

    جواب نمبر: 604720

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 835-178T/D=10/1442

     (۱) ساڑھے سات تولہ سونے پر زکاة واجب ہوتی ہے اس سے کم پر نہیں، یہ اس وقت ہے جب اس کی ملکیت میں صرف سونا ہو چاندی اور نقد روپئے بالکل نہ ہوں، ورنہ اگر کچھ چاندی اور نقد روپئے بھی ہوں گے تو سب کی قیمت لگالی جائے اور چاندی کے حساب سے زکاة واجب ہوگی یعنی ساڑھے باون تولہ چاندی کے برابر ہوجائے تو زکاة واجب ہوگی۔

    (۲) جس قدر سونا چاندی ملکیت میں موجود ہے سب پر زکاة واجب ہوگی یعنی پورے کا 2.5 فیصد زکاة میں دے۔

    نصاب سے زاید پر زکاة واجب ہونے والی بات درست نہیں ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند