• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 604229

    عنوان:

    زکاٰة ٹوٹل تنخواہ پر یا سیونگ پر

    سوال:

    میں نوکری کرتاہوں، میری تنخواہ ایک لاکھ روپئے ہے، ہر مہینہ کھانے اور کرائے میں 60000 روپئے خرچ ہوجاتے ہیں اور ہر مہینہ بچوں کی فیس 25000 روپئے ہے، یعنی سالانہ انکم 1200000 اور سالانہ خرچ 1020000 روپئے ہے، اس صورت میں کیا مجھ پر زکاة واجب ہوگی؟اور کل تنخواہ پر زکاة ہوگی یا بچت پر ؟

    جواب نمبر: 604229

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:836-649/L=9/1442

     آپ جس وقت سے نصاب(تقریبا۶۱۳گرام چاندی کی مالیت ) کے مالک ہوئے ہیں اس وقت سے سال گزر جانے پر زکوة کی ادائیگی لازم ہوگی، اور زکوة کی ادائیگی صرف ان رقوم پر ہوگی جو کہ سال گزرنے کے وقت آپ کے پاس موجود ہوں اور نصاب کے بقدر ہوں ،سال کے دوران جتنے روپے کھانے پینے کرائے اور بچوں کی فیس میں خرچ ہوگئے ان پر زکوة نہیں ہے ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند