• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 601396

    عنوان:

    جس مدرسے میں اولاد پڑھے اس میں زکات دینے کا حکم

    سوال:

    مسئلہ یہ معلوم کرنا ہے کہ جس مدرسے میں اولاد پڑھ رہی ہے اس مدرسے میں اولاد کے پڑھنے کی وجہ سے اتنی زکات دینا جتنا اولاد کا خرچ ہو کیا یہ جائز ہے نیز کیا زکات ادا ہو جائے گی یا نہیں؟

    جواب نمبر: 601396

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 253-175/D=04/1442

     اپنے بیٹے پر خرچ ہونے کی نیت سے زکاة نہ دے؛ بلکہ مدرسہ میں کسی بھی مصرف زکاة پر خرچ ہونے کی نیت سے دے۔ پھر مہتمم مدرسہ بعینہ یہ رقم معطی کے لڑکے پر خرچ نہ کرے تو جائز ہے۔

    معطی بیٹے کے خرچ کے بقدر رقم دینے کی پابندی نہ کرے کم و بیش کر دیا کرے۔

    سوال میں جو صورت ذکر کی گئی ہے اس میں بعض حالتوں میں ادائیگی زکاة مشتبہ رہے گی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند