• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 57792

    عنوان: جو پچیس فیصد رقم ملے گی اس میں سے اپنے اخراجات نکال کر زکاة دینا ہوگی؟

    سوال: ہم تین شرکاء ہیں، اور ہم کمپنی میں پچھتر فیصد روک لیتے ہیں، صرف پچیس فیصدہم شرکاء آپس میں تقسیم کرلیتے ہیں ، تو کیا ہمیں سو فیصد منافع کی اپنے اخراجات کو نکال کر زکاة نکالنا ہوگی یا مجھے جو پچیس فیصد رقم ملے گی اس میں سے اپنے اخراجات نکال کر زکاة دینا ہوگی؟ مجھے یقین نہیں ہے کہ ہمیں پچھر فیصد رقم کب ملے گی کیوں کہ یہ کمپنی میں محفوظ ہے تاکہ کمپنی بڑی اور مستحکم ہوجائے۔

    جواب نمبر: 57792

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 488-488/M=5/1436-U

    مسئولہ صورت میں سو فیصد منافع اور تمام اموال تجارت پر حسب شرائط زکاة کی ادائیگی واجب ہوگی۔ وفي عروض التجارة بلغت نصاب ورقٍ أو ذہبٍ یعني في عروض التجارة یجب ربع العشر إذا بلغت قیمتہا من الذہب أو الفضة نصابًا․ (تبیین الحقائق: ۲/۷۷ ط: دار الکتب العلمیة بیروت، خلاصة الفتاوی: ۱/۲۳۷ ط: امجد اکیڈمی لاہور، النہر الفائق: ۱/۴۳۹ ط: امدادیہ ملتان)․


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند