• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 54843

    عنوان: زمین بیچنے كی نیت سے خریدی تھی مگر بعد میں نیت بدل گئی

    سوال: میں نے ایک زمین خریدی ہے اس نیت سے کہ جب اس کی قیمت بڑھ جائے گی تو میں اسے بیچ دوں گاتو اس پر زکاة کے حوالے سے کیاحکم ہوگا؟کیا اس کا شمار بزنس پروپرٹی میں ہوگا؟اور کس چیز سے ایک پروپرٹی بزنس پروپرٹی میں بن جاتی ہے ؟ براہ کرم، رہنمائی فرمائیں۔

    جواب نمبر: 54843

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1549-1280/B=10/1435-U اگر زمین خریدتے وقت تجارت کی نیت تھی، یعنی اسے فروخت کرنے کی نیت سے خریدی تو وہ زمین مال تجارت میں شمار ہوگی، اور اس کی مالیت پر سالانہ زکاة واجب ہوگی، اور اگر زمین خریدتے قت تجارت کی نیت نہ تھی بلکہ کھیتی کرنے، باغ لگانے یا گھر بنوانے کی نیت تھی بعد میں بیچنے کی نیت کرلی تو اس زمین پر زکاة واجب نہ ہوگی۔ اس کا اصل مدار نیت پر ہے اگر خریدتے وقت بیچنے کی نیت سے خریدا تو یہ مال تجارت شمار ہوگی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند