• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 54061

    عنوان: میری شادی ہوئی تو میری بیوی کا حق مہر میرے والدین نے دس تولہ سونا رکھا اور وہ اسی وقت ادا ہوگیا اور وہ میری بیوی کی ملکیت ہے، ۲،۳ سال بعد جب زکاة کے حساب کے لیے اس نے اس کا وزن کروایا تو وہ سونا دس تولے سے آدھا یا اس سے بھی تھوڑا کم نکلا

    سوال: میری شادی ہوئی تو میری بیوی کا حق مہر میرے والدین نے دس تولہ سونا رکھا اور وہ اسی وقت ادا ہوگیا اور وہ میری بیوی کی ملکیت ہے، ۲،۳ سال بعد جب زکاة کے حساب کے لیے اس نے اس کا وزن کروایا تو وہ سونا دس تولے سے آدھا یا اس سے بھی تھوڑا کم نکلا اورمیری بیوی کا خیال ہے کہ شاید میرے والدین نے سونا کم دیا اور لکھوایا دس تولے اور وہ کہتی ہے کہ اب وہ سونا پورا کرنا میرا فرض ہے ، ورنہ میں گناہ گار ہوں گا جب کہ میرا خیال ہے کہ سونا استعمال کرنے سے کچھ ماشا رتی کم ہو جاتاہے اور وہ اسی وجہ سے کم ہوا ہے، آپ اس کا حل فرمائیں ۔ کیوں کہ والدین کے مطابق انہوں نے دس تولے پور پورا سونا دیا تھا۔جزاک اللہ خیر۔

    جواب نمبر: 54061

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1230-416/L=9/1435-U آپ اپنے والدین سے تحقیق کرلیں اگر وہ آپ کی بیوی کی بات تسلیم کرلیتے ہیں کہ واقعی انھوں نے دس تولہ سونا سے کم دیا تھا تو آپ دس تولہ مکمل کردیں، اور اگر آپ کے والدین یہ کہتے ہیں کہ میں نے دس تولہ مکمل دیا تھا تو پھر اب یہ قصور بیوی کا ہے کہ اس نے اسی وقت وزن کیوں نہیں کرایا، لہٰذا بیوی کی بات اس سلسلے میں مسموع نہ ہوگی؛ البتہ اگر آپ کو یقین ہوجائے کہ واقعی بیوی صحیح کہہ رہی ہے تو سونا پورا کردینا بہتر ہوگا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند