• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 50512

    عنوان: مكتب كے لیے چندہ كرنا

    سوال: میرے ایک دوست کا ایک مکتب ہے جس میں لڑکے اورلڑکیوں کو دینی تعلیم دی جاتی ہے اس میں تعداد ۱۰۰ کے قریب ہے ، تعلیم شام کے وقت ہوتی ہے ، لیکن وہ چندہ وصول کرتاہے،تو کیا یہ جائز ہے ؟ جواب دیں تو مہربانی ہوگی۔

    جواب نمبر: 50512

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 468-387/B=3/1435-U وہاں چندہ کی ضرورت ہے یا نہیں؟ کیا وہاں باہر کے طلبہ بھی رہتے ہیں جن کو دونوں وقت کھانا دیا جاتا ہے، یا صرف مقامی بچے ہیں جو صرف پڑھنے کے لیے آتے ہیں اور پڑھ کر چلے جاتے ہیں، اگر مدرسین کی تنخواہیں دینے کے لیے وہ دوست چندہ وصول کرتا ہے تو مکتب کی تفصیل صحیح بتلاکر صرف امدادی اور عطیہ کی رقم وصول کرسکتا ہے، مد زکاة کی رقم وصول کرنا جائز نہ ہوگا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند