• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 48118

    عنوان: زیورات مارکیٹ میں جس ریٹ پر بک سکتے ہیں اس کے اعتبار سے ادائیگی واجب ہے

    سوال: اگر ہم نے زیورات کی زکاة نہیں نکالی ہے تو کس حساب سے زکاة نکالیں گے؟موجودہ ریٹ جو چل رہا ہے اس کے حساب سے یا اگر ہم اپنے زیورات بیچنے جائیں گے تو سونار جو ریٹ اس زیورات کا لگائے اس ریٹ کے حساب سے نصاب لاگو ہوگا؟ کیوں کہ ابھی میں نے دیکھا ہے تو مارکیٹ میں دس گرا سونا کی قیمت 31840 ہے تو زکاة اسی قیمت کے حساب سے لاگو ہوگی یا فرض کریں کہ اسی دس گرام سونا کو سونار 16000 میں لے رہا ہے تو کیا سونار کی اس قیمت کے حساب زکاة دینا ہوگی؟ براہ کرم، اس بارے میں رہنمائی فرمائیں۔

    جواب نمبر: 48118

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1273-1273/M=11/1434-U آپ کے زیورات مارکیٹ میں جس ریٹ پر بک سکتے ہیں اس کے اعتبار سے ادائیگی واجب ہے اور اگر اس ریٹ کے حساب سے زکاة نکال دیں جس ریٹ پر سونار فروخت کرتا ہے تو یہ اور بہتر ہے، کیونکہ اس میں فقراء کا نفع زیادہ ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند