• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 39863

    عنوان: صاحب نصاب عورت اگر مقروض نہیں ہیں تو زیورات کی زکاة ادا کرنا اس پر لازم اور واجب ہوگا

    سوال: میری بیوی کے پاس زکات کے نصاب کے لائق سونا ہے اور میں نے پچھلے سال زکات دی تھی مگر میری بیٹی کے گردے خراب ہو گئے اور بھی کا ایک گردہ لگواکر اللہ روبل عزت نے بڑی کرم فرمائی کی اور اسکی جان بچ گئی، الحمد للہ ، اب وہ ٹھیک ہے مگر میری حیثیت سے کہیں زیادہ خرچ ہو گیا اور کافی لوگوں نے مدد بھی کی پھر بھی کافی قرض لیناپڑا اور اس کو دھیرے دھیرے یعنی ۵۰۰۰ ہر مہینے دے کر ادا کر رہا ہوں، ان حالات میں کیا مجھے زکات نکالنا ہے یا قرض کی ادایگی تک کوئی رخصت ہو سکتی ہے؟مہربانی فرما کر قرآن اور حدیث کی روشنی میں مطلع کریں۔ شکریہ

    جواب نمبر: 39863

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1125-805/D=7/1433 زیورات کی مالک اہلیہ ہیں، اگر وہ مقروض نہیں ہیں تو ان پر اپنے زیورات کی زکاة ادا کرنا لازم اور واجب ہوگا، سوال سے معلوم ہوتا ہے کہ قرض آپ کے ذمہ ہے نہ کہ اہلیہ کے ذمہ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند