• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 28972

    عنوان: ( ۱) کس مال پر زکاة ہے؟سال پورا ہونے پر زکاة اصل مال میں ہوگی یا منافع کی بنیا د پر زکاة دینی ہوگی؟
    (۲) میں ایک کمپنی میں شریک ہوں جس میں کھاد و بنائے جاتے ہیں ، کیا مجھے اپنے مال پر زکاة دینی ہوگی؟
    (۳) اسٹاک مارکیٹ میں بھی میں نے پیسے لگائے ہیں ، میں لمبے عرصے کے لیے میں پیسے لگاتاہوں ، میرا مقصد تجار ت نہیں ہوتاہے، کیا مجھے اپنی سرمایہ کاری پر زکاة دینی ہوگی؟
    (۴) مجھے شیئر پر منافع ملتے ہیں ، جیسے ہی مجھے یہ پیسے ملتے ہیں میں اسے لمبی مدت کے لیے شیئر کی خریدار میں لگادیتاہوں، اس لیے سال کے آخر میں میرے پاس شیئر ہوتے ہیں ، کیش نہیں؟کیا مجھے اس پر زکاذدینی ہوگی؟
    (۵) اگر میں تاخیر سے (چار پانچ برسوں کے بعد) شیئر بیچوں اور فائدہ ہو یا نقصان ، دونوں صورتوں میں اور پھر کسی دوسرے شیئر میں پیسے لگادوں تو کیا سال کے اختتام پر زکاة دینی ہوگی؟

    سوال: ( ۱) کس مال پر زکاة ہے؟سال پورا ہونے پر زکاة اصل مال میں ہوگی یا منافع کی بنیا د پر زکاة دینی ہوگی؟
    (۲) میں ایک کمپنی میں شریک ہوں جس میں کھاد و بنائے جاتے ہیں ، کیا مجھے اپنے مال پر زکاة دینی ہوگی؟
    (۳) اسٹاک مارکیٹ میں بھی میں نے پیسے لگائے ہیں ، میں لمبے عرصے کے لیے میں پیسے لگاتاہوں ، میرا مقصد تجار ت نہیں ہوتاہے، کیا مجھے اپنی سرمایہ کاری پر زکاة دینی ہوگی؟
    (۴) مجھے شیئر پر منافع ملتے ہیں ، جیسے ہی مجھے یہ پیسے ملتے ہیں میں اسے لمبی مدت کے لیے شیئر کی خریدار میں لگادیتاہوں، اس لیے سال کے آخر میں میرے پاس شیئر ہوتے ہیں ، کیش نہیں؟کیا مجھے اس پر زکاذدینی ہوگی؟
    (۵) اگر میں تاخیر سے (چار پانچ برسوں کے بعد) شیئر بیچوں اور فائدہ ہو یا نقصان ، دونوں صورتوں میں اور پھر کسی دوسرے شیئر میں پیسے لگادوں تو کیا سال کے اختتام پر زکاة دینی ہوگی؟

    جواب نمبر: 28972

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ھ): 225=162-2/1432

    (۱) روپیہ پیسہ، سونا چاندی، مالِ تجارت جو بھی آپ کی ملک میں ہے اس پر اور اس سے حاصل شدہ منافع میں سال پورا ہونے پر ہرسال زکاة واجب ہے، سال پورا ہونے سے پہلے جو خرچ ہوکر ختم ہوجائے اتنی مقدار پر زکاة کی ادائیگی کا حکم لاگو نہیں رہتا۔
    (۲) کمپنی میں شرکت کی تفصیل نیز کمپنی کھاد بناکر کیا کرتی ہے؟ اس کو لکھئے، اگر کمپنی تجارت کرتی ہے تو آپ کے سرمایہ اور منافع دونوں پر زکاة واجب ہے، جیسا کہ نمبر ایک کے تحت لکھ دیا گیا۔
    (۳) اس پیسے پر بھی زکاة واجب ہے۔
    (۴) ان سب پر اور ان کے منافع پر زکاة دینا واجب ہوگا۔
    (۵) ہرسال زکاة دینی ہوگی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند