• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 20207

    عنوان:

    زید نے بکر کو کاروبار کے لیے کریڈٹ کارڈ سے ایک لاکھ اور بینک لون سے پچاس ہزار کا قرض دیا۔ کاروبار نہ چلنے کی صورت میں بکر قرض ادا نہیں کرپایا۔ کیا اس صورت میں قرض کو زکوة اور قربانی کی ادائیگی میں تبدیل کرسکتے ہیں؟ برائے کرم جواب دے کر ثوابِ دارین حاصل کریں۔

    سوال:

    زید نے بکر کو کاروبار کے لیے کریڈٹ کارڈ سے ایک لاکھ اور بینک لون سے پچاس ہزار کا قرض دیا۔ کاروبار نہ چلنے کی صورت میں بکر قرض ادا نہیں کرپایا۔ کیا اس صورت میں قرض کو زکوة اور قربانی کی ادائیگی میں تبدیل کرسکتے ہیں؟ برائے کرم جواب دے کر ثوابِ دارین حاصل کریں۔

    جواب نمبر: 20207

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د): 423=317-3/1431

     

    قرض کو زکاة میں تبدیل کرنے سے زکاة ادا نہیں ہوگی، اگر بکر غریب مستحق زکاة ہے تو آپ علاحدہ سے زکاة کی رقم اسے دے کر اس کے قابض و مالک بن جانے کے بعد اپنی قرض کی رقم وصول کرسکتے ہیں۔ یا پھر خالد سے قرض لے کر بکر زید کا قرض ادا کردے پھر زید بکر کو زکاة کی رقم دے جس سے وہ خالد کا قرض ادا کرے۔ مجبوری اور پریشانی میں ایسی صورت اختیار کی جاسکتی ہے۔رہا قربانی کا معاملہ تو قربانی ایام اضحیہ میں قربانی کرنے سے ہی ادا ہوتی ہے، اس کے علاوہ دوسری کوئی صورت قربانی ادا ہونے کی نہیں ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند