• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 16120

    عنوان:

    میں نے ایک پلاٹ خریدا ہے، ابھی اس پر تعمیر کا کام شروع نہیں ہوا ہے۔ لیکن غالب گمان میرا یہ ہے کہ میں اس پر ایک مہینے کے بعد تعمیر کرکے کرایہ پر دوں گا۔ کیا ابھی اس پلاٹ پر زکوة فرض ہے؟

    سوال:

    میں نے ایک پلاٹ خریدا ہے، ابھی اس پر تعمیر کا کام شروع نہیں ہوا ہے۔ لیکن غالب گمان میرا یہ ہے کہ میں اس پر ایک مہینے کے بعد تعمیر کرکے کرایہ پر دوں گا۔ کیا ابھی اس پلاٹ پر زکوة فرض ہے؟

    جواب نمبر: 16120

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1495=1500/1430/م

     

    اگر آپ نے پلاٹ فروخت کرنے کی نیت سے نہیں خریدا ہے، بلکہ اس نیت سے لیا ہے کہ اس پر تعمیر کرکے کرایہ پر لگادوں گا، تو اس پلاٹ کی مالیت پر زکات نہیں بلکہ آمدنی پر زکات ہوگی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند