• عبادات >> زکاة و صدقات

    سوال نمبر: 15683

    عنوان:

    گزشتہ سال میری شادی ہوئی ہے او رمیرے شوہر کماتے نہیں ہیں، میرے شوہر تعلیم حاصل کررہے ہیں اور وہ اپنے والدین کے گھر رہتے ہیں اور میں اپنے والدین کے گھر رہتی ہوں کیوں کہ میرا ابھی تک ویزا نہیں لگا ہے اور میرا خرچہ میرے والدین پورا کرتے ہیں۔ تو میں یہ پوچھنا چاہتی ہوں کہ مجھ پر زکوة واجب ہے یا نہیں؟ اور اگر ہے تو اس کے لیے کتنا سوناچاندی یا اتنے پیسے ہونے چاہئیں؟

    سوال:

    گزشتہ سال میری شادی ہوئی ہے او رمیرے شوہر کماتے نہیں ہیں، میرے شوہر تعلیم حاصل کررہے ہیں اور وہ اپنے والدین کے گھر رہتے ہیں اور میں اپنے والدین کے گھر رہتی ہوں کیوں کہ میرا ابھی تک ویزا نہیں لگا ہے اور میرا خرچہ میرے والدین پورا کرتے ہیں۔ تو میں یہ پوچھنا چاہتی ہوں کہ مجھ پر زکوة واجب ہے یا نہیں؟ اور اگر ہے تو اس کے لیے کتنا سوناچاندی یا اتنے پیسے ہونے چاہئیں؟

    جواب نمبر: 15683

    بسم الله الرحمن الرحيم

    اگر آپ کی ذاتی ملکیت میں کچھ نقد پیسے ہیں اور تھوڑی چاندی اور تھوڑے سونے کا زیور ہے تو زکات ادا کرتے وقت سونے چاندی کی قیمت اور نقد پیسے سب کا مجموعہ نصاب بھر ہوجائے تو زکات آپ کے ذمہ واجب ہوگی، نصاب سے مراد ساڑھے باون تولہ چاندی یعنی (612.360 gm) کی قیمت تک یا اس سے زیادہ پہنچ جائے تو پھر چالیسواں حصہ زکات نکالنا واجب ہے۔ یعنی ڈھائی روپے سیکڑہ، اور ۲۵ روپئے ہزار زکات نکالی جائے گی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند