• معاشرت >> عورتوں کے مسائل

    سوال نمبر: 67702

    عنوان: اگر مزید بچوں کے ہونے پر عورت کی جان کا خطرہ ہو تو کیا اسقاط کی گنجائش ہے؟

    سوال: میری بیوی حمل سے ہے، آپریشن سے ہمارے دو بچے ہیں، ایک بیٹا اور ایک بیٹی ۔ ان دونوں آپریشن سے پہلے بیوی کا ایک اور آپریشن ہوا تھا جس میں اپینڈیکس(appendix) کونکال دیا گیا تھا، 2011ء میں اپینڈیکس میں ٹی بی ہوگیا تھا۔ اگر اب میں مزید بچے چاہوں تو اس کو جان کو خطرہ ہوسکتاہے کیوں کہ پہلے سے تین آپریشن ہوچکاہے۔ میرا سوال یہ ہے کہ کیا طبی نقطہ نظر سے میں یہ حمل ساقط کرسکتاہوں؟ براہ کرم، جواب دیں۔

    جواب نمبر: 67702

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1165-1251/H=11/1437

    اگر کسی متدین طبیب یا دین دار ڈاکڑ کی یہی تجویز و تشخیص ہو کہ آپ کی بیوی کے حق میں موجودہ حمل ناقابلِ برداشت اور حمل و ولادت کی معتاد تکلیف سے بہت زیادہ ہو جانے کا اندیشہ یا یقین ہے تو ایسی صورت میں اگر استقرار حمل پر چار ماہ سے کم مدت ہوئی ہے تو اس کو ساقط کرادینے کی گنجائش ہے اور بچہ کے اعضاء بن جانے اور روح پڑ جانے پر ساقط کرانا کسی حال میں درست نہیں بلکہ حرام و گناہ ہے ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند