• معاشرت >> عورتوں کے مسائل

    سوال نمبر: 57710

    عنوان: بغیر محرم کے ھوائ سفرکرنا کیسا ھے

    سوال: اگر کوئی لڑکی اکیلی دو گھنٹہ کا سفر کرے جبکہ اسکو ائیر پورٹ تک پہونچانے اور لینے والا ھو تو ایسا کرنا جائز ھے یا ناجائز؟برائے کرم مفصل بیان کریں۔

    جواب نمبر: 57710

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 245-210/Sn=4/1436-U کسی خاتون کے لیے محرم کی معیت کے بغیر مسافتِ سفر (سوا ستہتر کلومیٹر) سے زیادہ دوری کا سفر کرنا شرعاً جائز نہیں ہے، چاہے کتنی ہی تیز رفتار سواری سے سفر کرے، حدیث کے اندر اس سے ممانعت آئی ہے، لا تستافر المرأة سفرًا ثلاثة أیام فصاعدًا إلا ومعہا أبوہا أو أخوہا أو زوجہا أو ذو رحم محرم منہا (سنن الدارمي، رقم: ۲۷۲۰، باب: لا تسافر المرأة إلا ومعہا محرم)؛ لہٰذا صورت مسئولہ میں لڑکی کے لیے دو گھنٹے کا ہوائی سفر محرم کے بغیر کرنا جائز نہیں ہے، اگرچہ ایئرپورٹ تک پہنچانے اور لینے والا موجود ہو۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند