• معاشرت >> عورتوں کے مسائل

    سوال نمبر: 47356

    عنوان: غیر معتادہ

    سوال: حیض کی مدت صحیح نہ پتا چلے تو کیا کرنا چاہئے؟ یا یہ ممکن ہے کہ ہر ماہ مدت بدل جاتی ہے؟ کیا غسل واجب ہوگا اگر سات دن بعد دن میں صاف ہوجائے ،لیکن رات میں یا اگلے دن پھر سرخی یا سیاہی مائل ہو؟پھر صاف سارا دن کسی وقت ذرا سا ہو ، 8/9 دن ایسا ہوا ہے کئی ماہ، مگر غسل کرکے نماز پڑھ لی ہو پھر دوبارہ ہوتو گناہ تو نہیں؟ ہر روز غسل کرکے نماز پڑھنی ہوگی یا نہیں پڑھنی ہوگی؟ اور اگر رمضان میں بھی ایسا ہوجائے تو روزہ رکھنا ہوگا یا نہیں؟ بہشتی زیور بھی پڑھ لی ، لیکن اس میں اس قسم کا مسئلہ نہیں ملا۔ براہ کرم، جواب دیں ؟

    جواب نمبر: 47356

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1288-1025/D=12/1434-U جی ہاں، بہت سی عورتیں ”غیرمعتادہ“ ہوتی ہیں، ان کے حیض کی کوئی عادت متعین نہیں ہوتی، صورتِ مذکورہ میں بھی یہ عورت ”غیرمعتادہ“ ہے؛ اس لیے آٹھ نو دن ؛ بلکہ دس دن کے اندر جتنے دن بھی خون آئے اگرچہ وقفہ وقفہ کے ساتھ ہو، حیض شمار ہوگا، اس دوران نہ نماز پڑھے گی اور نہ روزہ رکھے گی، اگر اپنے آپ کو پاک سمجھنے کی وجہ سے نماز پڑھ لی تو اللہ سے امید ہے کہ مواخذہ نہ کرے گا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند