• معاشرت >> عورتوں کے مسائل

    سوال نمبر: 42534

    عنوان: بھائی كی بیوی غیر محرم ہے

    سوال: میں اور میرے ایک بڑے بھائی صاحب دونوں ایک ساتھ اپنے والدین کے ساتھ ایک ہی گھر میں رہتے ہیں ، دونوں شادی شدہ ہیں ، اب اللہ کے فضل سے نیا گھر بنوانے کا موقع آیا ہے ۔ میں جاننا یہ چاہتاہوں کہ کیا اسلامی اصول و آدب کے اعتبار سے دونوں بھائیوں کا اکٹھے رہنا ایک ہی مکان میں بہتر ہے یا علیحدہ علیحدہ رہنا بہتر ہے؟ کیوں کہ ساتھ رہنے میں بھی پردہ کا لحاظ نہیں ہوپاتاصرف اسی وجہ سے ور نہ اور کوئی بات نہیں ہے اور اگر والدین سب کو ساتھ ہی رہنے کی تلقین کریں تو کیا عمل اختیار کرنا چاہئے؟مثال کے طورپر ایک بڑا مکان ہے جس میں چارکمرے ہیں، ہر فرد کا کمرہ علیحدہ علیحدہ ہے تو لیکن کھانا پیناسب ساتھ ہوتاہے ایک ہی دستر خوان پر تو کیا دین کی روشنی میں ایسا کرنے میں کوئی حرج تو نہیں؟اگر کسی خاص مصلحت کے تحت ساتھ بھی رہنا پڑے تو خلاف دین تو نہیں؟

    جواب نمبر: 42534

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1754-1117/L=1/1434 بھائی کی بیوی غیرمحرم ہے اس سے پردہ کرنا ضروری ہے، اس لیے اگر ساتھ رہنے میں پردہ کا لحاظ نہ ہوپاتا ہو تو الگ الگ رہنا چاہیے، اگر گھر کشادہ ہو اور والدین کے ساتھ رہنے کے لیے ہی کہیں تو کم ازکم ہرشخص اپنے اعتبار سے پردہ کی کوشش کرلے، ایسی صورت میں کوئی ایسا نظم کرنا چاہیے جس سے غیرمحرم عورتوں سے پردہ ہوسکے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند