• معاشرت >> عورتوں کے مسائل

    سوال نمبر: 32589

    عنوان: کیاقرآن اور اللہ نے مرد کو اجازت دی ہے کہ مرد اپنی نیک فرمانبردار بیوی کو گالیاں دے

    سوال: کیاقرآن اور اللہ نے مرد کو اجازت دی ہے کہ مرد اپنی نیک فرمانبردار بیوی کو گالیاں دے بلاوجہ اور میرے والدین کو غلاظت بھری گالیاں دے اور بیوی بھی اگر آگے سے چپ کر جائے تو ہمارے قران نے یہ حکم کہاں دیا ہے کہ بلا کسی وجہ کے اپنی بیوی کو مارا پیٹاجائے ؟ براہ کرم، میرے سوال کا جواب دیں۔ میں بہت پس وپیش میں ہوں۔

    جواب نمبر: 32589

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(م): 1031=1031-7/1432 نہیں، قرآن میں ایسا کہیں نہیں کہا گیا ہے بلکہ حدیث میں تو یوں آیا ہے کہ سباب المسلم فسوق (مسلمان کو گالی دینا فسق وگناہ ہے) بلاوجہ اپنی بیوی اور اس کے والدین کو گالیاں دینا شریف آدمی کا کام نہیں؛ بلکہ بداخلاق اور بدزبان شخص ہی ایسا کرسکتا ہے بلاوجہ بیوی کو مارنے کی بھی اجازت نہیں، شوہر کو اللہ سے ڈرنا چاہیے، آپ کو چاہیے کہ شوہر کی اذیتوي پر صبر کریں اور شوہر کی نافرمانی سے بچتی رہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند