• عبادات >> اوقاف ، مساجد و مدارس

    سوال نمبر: 605392

    عنوان:

    مسجد كمیٹی كا ممبر كیسے لوگوں كو بنانا چاہیے؟

    سوال:

    مسئلہ یہ معلوم کرناتھاکہ ایساشخص کے بارے میں کیارائے رکھتے ہیں مفتیان کرام کہ جو خودنماز نہ پڑھتاہواورمسجدکمیٹی کاممبرہواورمسجد،امام کے حقوق پورے کرنے کے بجائے اپنی مرضی اوراپناقانون چلاتاہویہاں تک کہ دیگرکمیٹی ممبران کی بات بھی نہ مانتاہو ایسے شخص کے بارے میں کیا حکم اور رائے ہے ؟

    جواب نمبر: 605392

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:821-700/N=12/1442

     مسجداللہ رب العزت کا مقدس وپاکیزہ گھر اور عبادت خداوندی کی جگہ ہے؛ لہٰذا مسجد کے نظم وانتظام کے لیے جو کمیٹی بنائی جائے، اس میں اہل محلہ کے ایسے لوگوں کو ہی ممبر بنایا جائے، جو نماز روزے کے پابند، شرعی وضع قطع کے حامل ، امانت دار اور نظم وانتظام کی صلاحیت رکھتے ہوں اور جو شخص بے نمازی یا غیر شرعی وضع قطع کا حامل ہو، نظم وانتظام کی صلاحیت سے عاری ہو یا انتظامی امور میں بات بات پر بیجا اختلاف یا من مانی کا مزاج رکھتا ہو، اُسے کمیٹی کا ممبر نہیں بنانا چاہیے ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند