• عقائد و ایمانیات >> قرآن کریم

    سوال نمبر: 11323

    عنوان:

    (۱)قرآن پاک کے جو سجدہ تلاوت ہوتے ہیں وہ میں بھول گیا ہوں کہ کتنے کئے ہیں اور کتنے باقی ہیں ۔ اب میں ابہام کا شکار ہوں کہ کیا کروں، ڈر ہے کہ اگر چودہ سے زیادہ ہو جائیں تو کہیں شریعت میں اس کی کوئی رکاوٹ تو نہیں۔ جلدی جواب عنایت فرماویں۔(۲)آپ نے فتوی 10315میں لکھا ہے کہ کوئی مرد اگر اسلام لائے تو اس کو ختنہ کروانا چاہیے حالانکہ میں نے اہل دیوبند کا ہی ایک فتوی پڑھا تھا کہ اگر کوئی کافر بلوغت میں اسلام لائے تو اس کو ختنہ کروانا ضروری نہیں، کیوں کہ ختنہ کروانا سنت ہے، جب کہ ستر چھپانا فرض ہے۔ تو ایسا کیوں کر ہوسکتاہے کہ سنت کو پورا کرنے کے لیے فرض کو پیچھے چھوڑا جائے؟ وضاحت کردیں۔

    سوال:

    (۱)قرآن پاک کے جو سجدہ تلاوت ہوتے ہیں وہ میں بھول گیا ہوں کہ کتنے کئے ہیں اور کتنے باقی ہیں ۔ اب میں ابہام کا شکار ہوں کہ کیا کروں، ڈر ہے کہ اگر چودہ سے زیادہ ہو جائیں تو کہیں شریعت میں اس کی کوئی رکاوٹ تو نہیں۔ جلدی جواب عنایت فرماویں۔(۲)آپ نے فتوی 10315میں لکھا ہے کہ کوئی مرد اگر اسلام لائے تو اس کو ختنہ کروانا چاہیے حالانکہ میں نے اہل دیوبند کا ہی ایک فتوی پڑھا تھا کہ اگر کوئی کافر بلوغت میں اسلام لائے تو اس کو ختنہ کروانا ضروری نہیں، کیوں کہ ختنہ کروانا سنت ہے، جب کہ ستر چھپانا فرض ہے۔ تو ایسا کیوں کر ہوسکتاہے کہ سنت کو پورا کرنے کے لیے فرض کو پیچھے چھوڑا جائے؟ وضاحت کردیں۔

    جواب نمبر: 11323

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 334=308/ب

     

    (۱) زیادہ سے زیادہ تصور کرکے اتنے سجدے کرلے، اگر چودہ سے زیادہ ہوگئے تو کوئی مضائقہ نہیں۔ وہ نقلی سجدہ ہوجائے گا۔

    (۲) آپ نے جو فتویٰ پڑھا تھا وہ صحیح ہے۔ اور جس فتوے میں یہ لکھا ہے کہ ختنہ کروانا چاہئے اس کا مطلب یہ ہے کہ اگر وہ خود کرسکتا ہے یا اپنی بیوی سے کراسکتا ہے تو کروالے، یا شرمگاہ کے پاس کوئی پھوڑا پھنسی نکل آئی ہے اور ڈاکٹر سے پٹی کراتا ہے تو اسی بہانے ڈاکٹر سے ختنہ بھی کروالے، ان صورتوں میں ستر کھولنے کا گناہ نہ ہوگا، اور ختنہ کی سنت بھی ادا ہوجائے گی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند