• متفرقات >> تصوف

    سوال نمبر: 603306

    عنوان:

    مراقبہ کی حقیقت، بیعت کے بغیر مراقبہ

    سوال:

    مراقبے میں سب سے بہتر کا تصور کرنا سب سے بہتر ہے ؟مرشد کی بیعت لے بغیر مراقبہ یاں کوئی وظیفہ پڑھ سکتے ہیں؟

    جواب نمبر: 603306

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:613-435/sn=7/1442

     مراقبہ کی حقیقت اللہ تعالی کی ذات وصفات یا کسی مضمون (مثلا: موت وآخرت وغیرہ) کو دل سے پوری توجہ سے سوچنا؛ تاکہ اس کے مقصد اور مقتضی پر عمل ہونے لگے، جو قلب کے اعمال مقصودہ میں سے ہے اور یہ بھی معلوم رہے کہ وظائف اور مراقبہ دو طرح کے ہیں، ایک بہ طور ثواب، دوسرا بہ طور علاج، اگر بطور ثواب ہوتو اس میں بغیر مرشد بھی کرسکتے ہیں، اگر علاج کے طور پر ہو تو اہل اللہ کی صحبت میں یا ان کے بتائے ہوئے طریقے پر کرنا چاہئے؛ کیونکہ علاج خود تجویز کرنے سے کبھی کبھار نفع کے بہ جائے نقصان ہوجاتا ہے۔ (دیکھیں:شریعت وطریقت، ص:257) ؛ لہذا اگر آپ صفائی قلب کے لئے مراقبہ کرنا چاہتے ہیں تو کسی متبع سنت شیخ سے اصلاحی تعلق قائم کرلیں اور وہ جس امر کے مراقبے کی تعلیم کریں، مراقبے میں اسے دھیان میں رکھیں نیز وظائف بھی ان ہی کی ہدایت کے مطابق پڑھیں ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند