• معاشرت >> طلاق و خلع

    سوال نمبر: 603051

    عنوان:

    طلاق كے بعد رجوع كرنے كے لیے كیا گواہ بنانا ضروری ہے؟

    سوال:

    ایک طلاق رجعی کے بعد رجوع کی صورت میں گواہان لازم ملزوم ہے یا میاں بیوی کا آپس میں اقرار اور قبولیت کافی ہے ۔ نیز میں نے اپنی بیوی کو ایک طلاق رجعی کے بات رجوع کیا اور الفاظ تین بار دہرائے کہ میں میں اللہ اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلّم کو گواہ بنانے کے آپ سے رجوع کرتا آہوں قبول ہوں۔جس کے جواب میں بیوی نے قبولیت کا اقرار کیا،اس عمل کے بعد رجوع مکمل ہوگیا یا گواہ رکھ کے دوبارہ رجوع کیا جائے ؟

    جواب نمبر: 603051

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 636-467/B=07/1442

     رجعت کرنے میں گواہوں کا ہونا ضروری نہیں۔ پس مرد کا اتنا کہنا کافی ہے کہ میں نے تم سے رجعت کرلی۔ بیوی راضی نہ ہو جب بھی رجعت صحیح ہوجاتی ہے۔ جو صورت آپ نے اختیار فرمائی اس سے رجعت ہوگئی۔ دونوں میاں بیوی کی طرح زندگی گذار سکتے ہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند