• معاشرت >> طلاق و خلع

    سوال نمبر: 57412

    عنوان: میرے شوہر نے کہا کہ آئندہ اگر میں ایام حیض میں تم سے صحبت کروں تو ہمارا رشتہ ہمیشہ کے لیے ختم

    سوال: مفتی صاحب میرے شوہر نے کہا کہ آئندہ اگر میں ایام حیض میں تم سے صحبت کروں تو ہمارا رشتہ ہمیشہ کے لیے ختم۔ پھر انھوں نے ایام میں صحبت کی۔ ہم اپنے حافظہ پرزور ڈالتے ہیں تو یہ الفاظ ذہن میں ہیں کہ انھوں نے ”رشتہ ہمیشہ کے لیے ختم“ کہا۔ لیکن ان کا کہنا ہے کہ انھوں نے یہ الفاظ نہیں کہے، اور انھوں نے یوں ہی کچھ جملہ کہہ دیا تھا۔ ہم کو یقین ہے کہ انھوں نے یہ جملہ کہا پر ہم تذبذب میں ہیں کہ ”ہمیشہ کا لفظ“ بھی کہا تھا یا نہیں۔ براہ کرم رہنمائی فرمائیں ہم کیا کریں۔ کیوں کہ شوہر کسی بھی طرح رشتہ ختم کرنے پر تیار نہیں ہیں۔ اللہ پاک آپ سب کو بہت خوش رکھے۔ آپ سب کو دور تک اور دیر تک کے لیے قبول فرمائے۔ آمین۔ آپ کے جواب کی منتظر۔ آپ کی پریشان بہن، چار معصوم بچوں کی ماں۔

    جواب نمبر: 57412

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 223-436/H=6/1436-U ”اگر میں ایام حیض میں تم سے صحبت کروں تو ہمارا رشتہ ہمیشہ کے لیے ختم“ یہ ا لفاظ بولنا شوہر کو تو یاد نہیں تم کو تذبذب ہے کہ ”ہمیشہ کا لفظ“ بولا تھا یا نہیں؟ اگر بالفرض بول بھی دیا ہو تب بھی یہ حکم ہے کہ یہ الفاظ کنایات الطلاق کے قبیل سے ہیں اور ان کا حکم یہ ہے کہ جب تک طلاق کی نیت سے نہ بولے جائیں کسی قسم کی طلاق واقع نہیں ہوتی اب جب کہ شوہر ان الفاظ کے تکلم ہی کا ا نکار کرتا ہے تو طلاق کی نیت کا سوال ہی نہیں ہوتا اور جب طلاق کسی قسم کی واقع نہ ہوئی تو رشتہٴ نکاح باقی ہے، آپ کسی پریشانی میں مبتلا نہ ہوں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند