• معاشرت >> طلاق و خلع

    سوال نمبر: 28386

    عنوان: ایک عورت کو اس کے شوہر نے چھ بار طلاق دیدی ، لیکن اس بات کی تصدیق صرف عورت ہی کرتی ہے اور عورت کے والدین اس کے شوہر کو بلاتے ہیں تو وہ نہیں آتاہے ، اس بارے میں شریعت کیا کا حکم ہے؟کیا طلاق ہوگئی ہے؟

    سوال: ایک عورت کو اس کے شوہر نے چھ بار طلاق دیدی ، لیکن اس بات کی تصدیق صرف عورت ہی کرتی ہے اور عورت کے والدین اس کے شوہر کو بلاتے ہیں تو وہ نہیں آتاہے ، اس بارے میں شریعت کیا کا حکم ہے؟کیا طلاق ہوگئی ہے؟

    جواب نمبر: 28386

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ل): 15=11-1/1432

    طلاق کے وقوع کا حکم اس وقت قطعی طور پر لگایا جاسکتا ہے جب کہ شوہر طلاق کا اقرار کرے یا اس پر شرعی شہادت قائم ہو، محض عورت کے کہنے پر طلاق کے وقوع کا حکم نہیں لگایا جاسکتا، البتہ اگر عورت نے اپنے کانوں سے اپنے شوہر کا چھ مرتبہ طلاق دینا سن لیا ہے تو اب اس کے لیے اپنے شوہر کو اپنے اوپر قدرت دینا جائز نہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند