• عبادات >> طہارت

    سوال نمبر: 66286

    عنوان: رات کو جو کپڑا پہن کر سوتے ہیں، کیا اسی کپڑے میں نماز پڑہ سکتے ہیں ؟

    سوال: مجھ کو پیشاب مکمل نہیں ہوتا۔ فارغ ہونے میں بہت وقت لگتا ہے ۔ بعض اوقات آدھا گھنٹہ ہوجاتا ہے ، تب بھی قطرہ نکلتا رہتا ہے ۔ یہ وسوسہ نہیں ہے یقینی ہے ، اور جب نماز کے لئے جاتا ہوں تو نماز کے دوران بھی قطرہ نکلتا ہے ۔ اور نماز کے علاوہ اور کاموں میں ہوتا ہوں، تب بھی ایسا ہوتا ہے ۔ اس وجہ سے بار بار کپڑا تبدیل کرنا پڑتا ہے ۔ غسل کے دوران یا غسل کے بعد قطرہ آ نے کا امکان ہوتا ہے ۔ فی الحال میں ایک طریقہ اپنا رہا ہوں۔ استنجاء جانے کے وقت کپڑا بدل لیتا ہوں، جو میں صرف اسی کے لئے خاص کر رکھا ہوں۔ پیشاب کرنے کے تقریبا آدھے گھنٹے تک اسی میں رہتا ہوں۔ پھر میں دوبارہ بیت الخلاء جا کر پیشاب کے بغیر صرف عضو دھو کر آجاتا ہوں اور کپڑا بدل لیتا ہوں۔ سفر میں اس پر عمل ہو ہی نہیں پاتا، اور مقام میں بھی تکلیف ہوتی ہے جس کی وجہ سے میری مقام اور سفر کی بہت سی جماعت کی نمازیں فوت ہوجاتی ہیں۔ ایسی حالت میں مجھے کیا طریقہ اپنانا چاہیے ۔ سفر میں اور مقام میں اس کا کیا حل ہے ۔ براہ کرم تفصیل سے رہنماء فرمائیں۔اور رات کو جو کپڑا پہن کر سوتے ہیں، کیا اسی کپڑے میں نماز پڑہ سکتے ہیں ؟

    جواب نمبر: 66286

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 721-617/D=9/1437 آپ جو طریقہ اختیار کرتے ہیں کہ استنجے کو وقت اور کچھ دیر بعد تک کے لیے الگ کپڑا ہوتا ہے پھر دوسرا کپڑا بدل لیتے ہیں یہ طریقہ ٹھیک ہے بعض بزرگوں کا ایسا ہی معمول رہا ہے۔ سفر وغیرہ میں اگر کپڑا تبدیل کرنے کا موقعہ نہ ہو تو یہ بات سمجھ لیں کہ اگر کپڑے میں پیشاب کا قطرہ ٹپک گیا تو اس سے پورا کپڑا ناپاک نہیں ہوتا نہ ہی کپڑا تبدیل کرنا ضروری ہوتا ہے بلکہ اگر صرف اتنے حصہ کو دھولیں جہاں قطرہ ٹپکنے کا شبہ ہے تو بھی کافی ہے، اور اگر کپڑا دھونے کا موقعہ نہ مل سکے اور قطرہ کا پھیلاؤ ہتھیلی کے گہرائی والے حصہ سے کم ہے تو ایسے کپڑے میں نماز پڑھ لینے کی گنجائش ہے، یہ دو مسئلے آپ کو بتلا دئیے تاکہ سفر کی مجبوری میں زیادہ پریشانی میں نہ پڑیں البتہ پاکی صفائی کا زیادہ اہتمام رکھنے والے اللہ کو زیادہ محبوب ہوتے ہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند