• عبادات >> طہارت

    سوال نمبر: 605867

    عنوان:

    بواسیری مسوں کی تری کپڑوں کو لگ جائے تو کا کیا حکم ہے؟

    سوال:

    محترم مفتی صاحب۱میں خونی و بادی بواسیر کا مریض ہوں ۔ جب مرض کی شدت نہیں بھی ہو تو بواسیر کے مسے کسی قدر باہر نکلے رہتے ہیں۔ استنجاسے فراغت کے بعد بھی کافی دیر تک باہر رہتے ہیں۔ ان مسوں سے رطوبت تو نکلتی محسوس نہیں ہوتی کیونکہ اگر بہتی ہوتی تو انڈر ویر پر بہت زیادہ تری ہوجاتی ۔ مسئلہ یہ ہے کہ مسے باہر ہونے کی وجہ سے جو تری کپڑوں کو لگ جاتی ہے ان میں نماز ادا کی جاسکتی ہے یا وہ ناپاک ہونگے۔ اور وضو کے بعد بھی یہ تری جاری رہے تو وضو باقی رہے گا یا نہیں۔ براہ کرم مطلع فرمائیں۔ بڑی الجھن میں ہوں۔ نوکری کی وجہ سے دن بھر گھر سے باہر ہوتا ہوں تو ظہر ، عصر اور مغر ب کی نماز خطرے میں پڑجاتی ہے۔ اور مرض کی وجہ سے اکثر کمزوری رہتی ہے کپڑے تبدیل کرنا اور بار بار استنحجا کرنا نہایت تکلیف دہ لگتا ہے۔ جس کی وجہ سے عبادات پر بہت اثر پڑرہا ہے۔

    اللہ رب العزت آپ کو اعلیٰ مقامات سے نوازے۔ مجھے اس الجھن سے نجات کا راستہ بتائیں تو ممنون و مشکور ہوں گا۔

    جواب نمبر: 605867

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 1300-181T/B=01/1443

     آپ کو جب بواسیر کے مسوں سے ہر وقت رطوبت نہیں نکلتی ہے تو آپ معذور کے حکم میں نہیں ہیں، جب نماز پڑھنے کا ارادہ کریں تو اپنے اَنڈرویئر کو دیکھ لیا کریں، اگر چاندی کے روپئے کے برابر یا اس سے کم لگی ہوئی ہے تو اس کے ساتھ نماز پڑھ سکتے ہیں اور اگر اس سے زیادہ مقدار میں تری لگی ہوئی ہے تو اس اَنڈرویئر کو بدلنا ضروری ہے ۔ آپ کسی ماہر طبیب سے یونانی علاج کرائیں، ان شاء اللہ یہ ساری پریشانیاں دور ہوجائیں گی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند