• عبادات >> طہارت

    سوال نمبر: 602788

    عنوان:

    ٹھنڈك كی وجہ سے وضو كرنے كی ہمت نہ ہو تو كیا تیمم كرسكتے ہیں؟

    سوال:

    کیا فرماتے ہیں علمائے کرام مفتیان عظام زید کے والد کی عمر پچھتر ۷۵برس کی ہے بیمار رہتے ہیں آج کل جنوری کی ٹھنڈ کا موسم ہے فجر میں اٹھتے ہیں تو ان کو وضو کرنے کی بالکل ہمت نہیں ہوتی جس کی وجہ سے وہ فجر کی نماز قضا کر دیتے ہیں آیا وہ ایسی صورت میں تیمم کرکے فجر کی نماز ادا کر سکتے ہیں۔

    جواب نمبر: 602788

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 523-474/L=08/1442

     محض ہمت نہ ہونا تیمم کے جواز کے لیے کافی نہیں، اگر ٹھنڈا پانی مضر ہو تو گرم پانی سے وضو کریں؛ لیکن ٹھنڈے یا گرم پانی سے وضو پر قدرت ہوتے ہوئے تیمم کرنا جائز نہ ہوگا؛ البتہ اگر یقین یا ظن غالب ہوکہ ٹھنڈے یا گرم پانی سے وضو کرنے کی صورت میں مرض لاحق ہوسکتا ہے یا مریض آدمی کے مرض میں اضافہ ہوسکتا ہے تو ایسے آدمی کے لیے تیمم کرکے نماز پڑھنے کی گنجائش ہوگی۔ (أو لمرض) یشتد أو یمتد بغلبة ظن أو قول حاذق مسلم ولو بتحرک (الدر المختار) وفي رد المحتار: (قولہ بغلبة ظن) أي عن أمارة أو تجربة شرح المنیة (قولہ أو قول حاذق مسلم) أي إخبار طبیب حاذق مسلم غیر ظاہر الفسق، وقیل عدالتہ شرط شرح المنیة۔ (الدر المختار وحاشیة ابن عابدین (رد المحتار) 1/233)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند