• عبادات >> طہارت

    سوال نمبر: 601802

    عنوان:

    شرمگاہ کی نوک پر ٹیپ لگاکر غسل کرنا

    سوال:

    مسئلہ یہ کہ ایک آدمی کو یہ _تکلیف_ ہے کہ جب بیوی سے صحبت کرکے فارغ ہوجاتاہے اسکے بعد تقریبا ۲یا ۳گھنٹے پانی جیسی ناپاک رطوبت (مزی) آتی رہتی ہے تو اس ۲، ۳گھنٹے پورے ہونے سے پہلے اسکے لئے غسل کرنا مشکل ہوجاتاہے بعض مرتبہ نماز کا وقت آجاتاہے تو امام ہو تو نماز پڑھانے کا ورنہ نماز پڑھنے کا مسئلہ پیش آجاتاہے، تو ایسا شخص یہ کرتا ہے کہ صحبت سے فارغ ہونے کے بعد صرف استنجاء کرتاہے استنجاء کے بعد شرم گاہ کو کسی کپڑے یا ٹیشو پیپر سے سوکھا لیتاہے پھر شرمگاہ کے نوک پر ٹیپ لگالیتاہے تاکہ مزی کا پانی باہر نہ آوے پھر وہ غسل کرتاہے، تو کیا اس طرح کرنے سے غسل ہوجاتاہے؟ جب کے غسل کرتے وقت شرمگاہ کی نوک پر لگائی ہوئی ٹیپ کے نیچے پانی نہیں پہنچتا، جبکہ اس نے پہلے شرمگاہ کو دھولیاتھا ساتھ میں خشک بھی کرلیاتھا تاکہ اس پر ٹیپ لگ سکے، تو کیا مجبوری وجہ سے اس طرح غسل ہوجاتاہے؟ *مسئلہ# ۲* اگر اس طرح غسل صحیح نہیں ہوتا، تو اس طرح اگر کسی نے غسل کرلیا ہو تو پورا غسل پھرسے دوہرانا ہوگا؟ یا صرف شرمگاہ دھو لیں گے، تو کافی ہوجائے گا؟

    جواب نمبر: 601802

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 416-313/H=05/1442

     (۱) شرمگاہ کو دھوکر خشک کرکے ٹیپ لگالی اور پھر غسل کرلیا تو غسل درست ہوگیا خواہ غسل کرتے وقت ٹیپ کے نیچے والے حصہ پر پانی نہ پہونچا ہو۔

    (۲) غسل دہرانے کی ضرورت نہیں ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند