• عبادات >> صوم (روزہ )

    سوال نمبر: 604922

    عنوان:

    کمزوری کی وجہ سے روزہ نہ رکھنا

    سوال:

    میری عمر 26 سال ہے ۔ جسمانی لحاظ سے میں بالکل کمزور ہوں۔ روزے رکھنا چاہتا ہوں۔ مگر مجھ سے نہیں رکھے جاتے ۔ بھوک پیاس برداشت نہیں ہوتی۔ طاقت ختم ہو جاتی ہے ۔ مجھے ہر 2 سے 3 گھنٹے کے بعد کچھ نہ کچھ کھانا پڑتا ہے ۔ پانی پینا پڑتا ہے ۔ ورنہ مجھ میں سکت نہیں رہتی۔ میں بستر پر لیٹ جاتا ہوں۔ کوء کام نہیں ہوتا مجھ سے ۔ روزہ رکھ لوں تو توڑنے کی نوبت آ جاتی ہے ۔ برائے مہربانی مجھے بتائیں کہ کیا میں روزے چھوڑ سکتا ہوں۔ یا روزوں کا فدیہ ادا کر سکتا ہوں۔

    جواب نمبر: 604922

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 1094-234T/H=10/1442

     اگر مذکورہ فی السوال پریشانیاں سردی کے زمانہ میں روزہ رکھنے میں پیش نہ آتی ہوں تب تو فدیہ اداء کرنا کافی نہیں؛ بلکہ سردی کے زمانہ میں روزوں کی قضاء کرنا ہی واجب ہے خواہ ایک ساتھ نہ رکھیں؛ بلکہ متفرق رکھ لیں مثلاً دو روزے رکھ کر دو دن چھوڑ دیں پھر دو دن رکھ لیں، اس طرح چھوٹے ہوئے روزوں کی قضاء کرلیں۔ ابھی آپ کی عمر 26 سال ہے تو کسی اچھے طبیب سے علاج کرائیں ان شاء اللہ روزہ رکھنے کی قوت آجائے گی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند