• عبادات >> صوم (روزہ )

    سوال نمبر: 47057

    عنوان: آپ کے روزہ رکھنے سے ان کا روزہ ادا نہ ہوگا

    سوال: اگر میرے والد صاحب جن کی عمر ۵۵ سال ہے اور وہ دل کے چھوٹے سے مرض میں مبتلاء بھی ہیں ، وہ پابندی سے تمام روزے نہیں رکھ رہے ہیں اور وہ سیگریٹ بھی پیتے ہیں جو کہ بنیادی وجہ ہے ان کے روزہ چھوڑے نے کی تو اس صورت میں میرا سوال یہ ہے کہ بہ نسبت ان کے بیٹے ہونے کے کیا میں ان کی طرف سے ان کے تمام روزوں کا تخمینہ لگا کر جو انہوں نے نہیں رکھے ہیں ، کفارہ ادا کرسکتاہوں؟ اب یا تو میں روزے رکھوں یا مسکین کو کھانا کھلاؤں یا پھر اتنی رقم مسکین میں تقسیم کروں؟ براہ کرم، تفصیل سے بتائیں۔ اللہ آپ کو جزائے خیر عطا فرمائے۔ آمین۔

    جواب نمبر: 4705701-Sep-2020 : تاریخ اشاعت

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1108-227/D=9/1434 آپ کے روزہ رکھنے سے ان کا روزہ ادا نہ ہوگا، البتہ فدیہ دینے کا حکم اس وقت ہے جب آدمی نہ اس وقت روزہ رکھ سکتا ہے بیماری کمزوری کی وجہ سے نہ آئندہ رکھنے کی طاقت پیدا ہونے کی امید ہے تو یہ شخص خود یا اس کی طرف سے دوسرا شخص فدیہ ادا کرسکتا ہے لیکن اگر فدیہ ادا کرنے کے بعد جسم میں روزہ رکھنے کی طلاقت پیدا ہوگئی تو روزہ پھر سے رکھنا ہوگا۔ ایک روزہ کا فدیہ ایک كلو چھ سو تینتیس گرام (1.633kg) کیہوں ہے خواہ گیہوں فقیر کو دیدیا جائے یا اس کی قیمت دونوں جائز ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند