• عبادات >> صوم (روزہ )

    سوال نمبر: 25406

    عنوان: میری دادی کی عمر73/ سال ہے،انہیں ذیابیطس اور لو بلڈ پریشر کی شکایت ہے، پیشاب گاہ میں انفیکش ہے نیز انہیں فالجکا حملہ بھی ہے، تو کیا رمضان کے پورے مہینہ کا روزہ رکھنا ضروری ہے؟ یا کوئی اور راستہ ہے؟ براہ کرم، اس پر روشنی ڈالیں۔ 

    سوال: میری دادی کی عمر73/ سال ہے،انہیں ذیابیطس اور لو بلڈ پریشر کی شکایت ہے، پیشاب گاہ میں انفیکش ہے نیز انہیں فالجکا حملہ بھی ہے، تو کیا رمضان کے پورے مہینہ کا روزہ رکھنا ضروری ہے؟ یا کوئی اور راستہ ہے؟ براہ کرم، اس پر روشنی ڈالیں۔ 

    جواب نمبر: 25406

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د): 1478=1155-10/1431

    اگر آپ کی دادی بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنے پر قادر نہ ہوں اور آئندہ بھی روزہ رکھنے کی امید نہ ہو تو وہ روزانہ افطار (روزہ نہ رکھ) کرکے ایک فقیر کو ایک کلو چھ سو تینتیس گرام گیہوں یا اس کی قیمت فدیہ میں ادا کرسکتی ہیں، اگر فدیہ ادا کرنے کے بعد روزہ رکھنے کی طاقت عود کر آئی تو پہلے والا فدیہ باطل ہوجائے گا اور از سر نو روزہ رکھنا پڑے گا (ہندیہ) اور اگر مرض کی وجہ سے روزہ رکھنا دشوار ہو یا روزہ رکھنے سے مرض میں اضافہ ہونے کا اندیشہ ہو تو شرعاً ان کو روزہ نہ رکھنے کی اجازت ہے، مگر صحت یابی کے بعد ان کی قضا لازم ہوگی۔ لقولہ تعالی: فَمَنْ کَانَ مِنْکُمْ مَّرِیْضًا اَوْ عَلَی سَفَرٍ فَعِدَّةٌ مِنْ اَیَّامٍ اُخَر․ (القرآن)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند