• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 7819

    عنوان:

    آج فجر کی نماز میں دوسری رکعت کے پہلے سجدہ میں اسپیکر خراب ہوگیا اور امام صاحب کی آواز نہ آئی باہر کے لوگ کافی دیر تک سجدہ میں ہی رہے ، پھر کسی نمازی نے اللہ اکبر کہا، اور لوگوں نے سجدہ ختم کیا اور تشہد پر بیٹھ گئے۔ امام صاحب دو سجدہ کرچکے تھے، لیکن باہر لوگوں نے صرف ایک ہی سجدہ کیا اور سلام پھیر کر نماز ختم ہوگئی۔ کیا باہر کے لوگوں کی نماز ہوگئی؟ باہر کے لوگ کیا کرتے توان کی نماز ہوجاتی ؟ میں بھی باہر کے لوگوں میں سے تھا۔ جب امام صاحب نے سلام پھیرا تو مجھے پتہ تھا کہ ایک سجدہ ادا نہیں ہواہے تو میں نے امام کے ساتھ سلام نہیں پھیرا اور اپنا سجدہ کیا پھر دوبارہ تشہد پڑھا اور درود شریف اور دعا ، پھر میں نے سلام پھیرا۔ تو کیا میری نماز ہوگئی؟

    سوال:

    آج فجر کی نماز میں دوسری رکعت کے پہلے سجدہ میں اسپیکر خراب ہوگیا اور امام صاحب کی آواز نہ آئی باہر کے لوگ کافی دیر تک سجدہ میں ہی رہے ، پھر کسی نمازی نے اللہ اکبر کہا، اور لوگوں نے سجدہ ختم کیا اور تشہد پر بیٹھ گئے۔ امام صاحب دو سجدہ کرچکے تھے، لیکن باہر لوگوں نے صرف ایک ہی سجدہ کیا اور سلام پھیر کر نماز ختم ہوگئی۔ کیا باہر کے لوگوں کی نماز ہوگئی؟ باہر کے لوگ کیا کرتے توان کی نماز ہوجاتی ؟ میں بھی باہر کے لوگوں میں سے تھا۔ جب امام صاحب نے سلام پھیرا تو مجھے پتہ تھا کہ ایک سجدہ ادا نہیں ہواہے تو میں نے امام کے ساتھ سلام نہیں پھیرا اور اپنا سجدہ کیا پھر دوبارہ تشہد پڑھا اور درود شریف اور دعا ، پھر میں نے سلام پھیرا۔ تو کیا میری نماز ہوگئی؟

    جواب نمبر: 7819

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1189=1050/ل

     

    باہر کے لوگوں میں سے جنھوں نے ایک ہی سجدہ کے بعد سلام پھیردیا ان کی نماز نہیں ہوئی، ان کو اس نماز کا اعادہ ضروری ہے، اور جن لوگوں نے دوسرا سجدہ کرنے کے بعد سلام پھیرا ان کی نماز صحیح ہوگئی۔ آپ نے چونکہ دوسرا سجدہ کرنے کے بعد تشہد وغیرہ پڑھ کر سلام پھیرا اس لیے آپ کی نماز صحیح ہوگئی اس کے اعادہ کی ضرورت نہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند