• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 68578

    عنوان: ایک ایسا آدمی جو نہ بول سکتا ہے اور نہ سن سکتا ہے اس کے لیے نماز کا کیا حکم ہے؟

    سوال: ایک ایسا آدمی جو نہ بول سکتا ہے اور نہ سن سکتا ہے اس کے لیے نماز کا کیا حکم ہے؟

    جواب نمبر: 68578

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 988-973/N=10/1437 اگر کوئی شخص نہ بول سکتا ہے اور نہ سن سکتا ہے، البتہ بالغ ہونے کے ساتھ عاقل ہے، یعنی:اشارے سے تمام باتیں سمجھتا ہے تو اس پر نماز فرض ہوگی اور وہ چوں کہ زبان سے بولنے اور پڑھنے پر قادر نہیں ہے ؛ اس لیے وہ تکبیر تحریمہ کے لیے زبان کو صرف حرکت دے گا اور قراء ت کے لیے صرف دل کی نیت ورادہ کافی ہوگا اور قیام اور رکوع وغیرہ سے عاجز نہیں ہے؛ اس لیے عام نمازیوں کی طرح قیام اور رکوع وغیرہ کے ساتھ نماز ادا کرے گا(در مختار وشامی ۲: ۱۸۱، ۱۸۲، مطبوعہ: مکتبہ زکریا دیوبند) ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند