• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 61406

    عنوان: میری نمأز گھر میں درست ہے

    سوال: ہم گھر میں تین باشندے ہیں ایک تو میری ماں اور بھائی دو۔ محلے کی مسجد اور محلے سے تقریباً آنے جانے میں ایک گھنٹہ لگ جاتا ہے اور ہم جنگل کے بہت قریب رہتے ہیں جنگلی جانوروں کا بھی خوف رہتا ہے، برائے مہربانی پوری تفصیل سے اس مسئلے کا حل ارسال کریں۔

    جواب نمبر: 61406

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1053-1033/N=11/1436-U اگر آپ کے محلہ یا گاوٴں میں کوئی مسجد نہیں ہے اور سوال میں مذکور مسجد کافی فاصلہ پر ہے کہ ہر نماز کے لیے مسجد جانے میں بہت زیادہ حرج ہوتا ہے تو آپ دونوں بھائی جن نمازوں میں بسہولت مسجد جاسکیں وہ نمازیں مسجد جاکر پڑھ لیا کریں اور جن نمازوں میں مسجد جانا دشوار ہو بالخصوص رات کی نمازیں تو وہ نمازیں آپ دونوں گھر ہی میں باجماعت ادا کرلیا کریں، قال في تنویر الأبصار (مع الدر والرد، کتاب الصلاة، باب الإمامة ۲:۲۹۰، ۲۹۱ ط مکتبة زکریا دیوبند) :فتسن أو تجب علی الرجال العقلاء البالغین الأحرار القادرین علی الصلاة بالجماعة من غیر حرج اھ وفی الرد:قولہ:”من غیر حرج“ قید لکونھا سنة موٴکدة أو واجبة فبالحرج یرتفع الإثم ویرخص في ترکھا الخ ونقل عن الحلبي أن الوجوب عند عدم الحرج وفي تتبعھا فی الأماکن القاصیة حرج لا یخفی اھ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند