• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 605456

    عنوان:

    بد عقیدہ شخص کے پیچھے نماز پڑھنے کا حکم

    سوال:

    کیا فرماتے ہیں مفتیان کرام و علماء عظام مسئلہ ذیل میں کہ اگر کسی شخص کا یہ عقیدہ ہو کہ قبر میں عذاب نہیں ہوگا اور تمام رسل برابر ہیں کسی کو کسی پر فضیلت حاصل نہیں ہے نبی علیہ السلام اپنی قبر میں موجود نہیں ہیں بلکہ مٹی ہو گئے ہیں اس لئے کہ وہ بشر ہیں اور وہ شخص حضرت عیسیٰ علیہ السلام کے نزول کا منکر ہے اور اسی طرح امام مہدی کے نزول کا بھی منکر ہے نیز اسراء و معراج کا بھی منکر ہے اور جو احادیث اس کی خواہش کے موافق ہو اس پر عمل کرتا ہے اور جو اس خواہش کے موافق نہ ہو اس کو چھوڑ دیتا ہے ایسے شخص کے پیچھے حنفی المسلک شخص کا نماز پڑھنا کیسا ہے اگر اس کی اقتداء میں نماز پڑھ لی جائے تو کیا نماز ہو جائے گی یا واجب الاعادہ ہوگی؟ بینوا توجروا

    جواب نمبر: 605456

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:937-629/sd=12/1442

     ایسا شخص کافر ومرتد ہے ، اس کے پیچھے نماز پڑھنا قطعا درست نہیں ہے ، جو نمازیں پڑھی گئی ہیں، وہ واجب الاعادہ ہیں ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند