• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 604575

    عنوان:

    تراویح نفلی عبادت ہے یا سنت مؤكدہ‏، نیز تراویح كو انفرادی طور پر ادا كرنا كیسا ہے؟

    سوال:

    تراویح کی اسلام میں کیا حیثیت ہے ، یہ نفلی عبادت ہے یا سنت موکدہ؟ اور کیا تراویح انفرادی طور پر کوئی مرد گھر میں ادا کر سکتا ہے اگر جماعت چھوٹ جائے ؟ کیاتراویح ادا نہ کرنے والا شخص گنہگار ہوگا؟

    جواب نمبر: 604575

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 1039-831/H=10/1442

     (۱) تراویح سنت موٴکدہ ہے۔ التراویح سنة موٴکدة للرجال والنساء جمیعاً باجماع الصحابة ومن بعدہم من الأئمة الخ مجمع الأنہر: 1/202، اور جب کہ تراویح سنت موٴکدہ ہے تو بغیر کسی عذر کے اُس کا مسلسل ادا نہ کرنے والا گناہ گار ہے۔

    (۲) اگر کسی مرد کی تروایح مسجد کی جماعت سے چھوٹ جائے اور وہ تنہا گھر میں اداء کرلے تو کچھ حرج نہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند