• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 604268

    عنوان:

    جماعت کی نماز میں لوگوں كے زیادہ ہونے كی وجہ سے سجدہ نہ ہوسكے تو كیا كریں؟

    سوال:

    مسجد یا کسی جگہ جماعت کی نماز کے لئیے نمازیوں کی زیادہ تعداد کی وجہ سے اگر اتنی کم جگہ ہو کہ وہاں سجدہ کرنا ممکن نہ ہو لیکن قیام اور رکوع ہو سکتا ہو تو کیا وہاں جماعت کی نماز میں اس طرح شامل ہوا جا سکتا ہے کہ بیٹھ کر یا کھڑے ہو کر نماز پڑھی جائے اور سجدہ اشارہ سے ادا کیا جائے ؟ یا پھر اس طرح کی صورتحال میں کیا جماعت کی نماز ختم ہونے کے بعد اپنی فرض نماز انفرادی پڑھی جائے؟ کیا زیادہ بہتر ہے؟

    جواب نمبر: 604268

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:719-585/N=9/1442

     اگر کسی جگہ نماز باجماعت میں کوئی نماز ی صف میں کسی ایسی جگہ پھنس جائے کہ اُس کے لیے زمین پر سجدہ کرنا ممکن نہ ہو تو وہ سجدے کے اشارے کے ساتھ نماز نہیں پڑھ سکتا، یعنی: اگر وہ سجدے کے اشارے کے ساتھ نماز پڑھے گا تو اُس کی نماز نہیں ہوگی؛ بلکہ اُسے چاہیے کہ توقف کرے اور جب سجدہ کا موقعہ ملے تو سجدہ کرے، اور اگر یہ شخص بھیڑ کی وجہ سے گھٹنے زمین پر ٹیک کر اُسی نماز میں شریک کسی ایسے نمازی کی پیٹھ پر سجدہ کرے جو زمین پر سجدہ کررہا ہے تو بھیڑ کی مجبوری میں ایسے سجدے کے ساتھ کے اُس کی نماز ہوجائے گی (در مختار وشامی، ۲: ۲۰۹، ۱۴۴، ۱۴۵، مطبوعہ: مکتبہ زکریا دیوبند)؛ البتہ یہ طریقہ اُسی وقت اختیار کیا جاسکتا ہے جب سامنے والا نمازی بھی یہ مسئلہ جانتا ہو، یعنی: کسی نمازی کی پیٹھ پر سجدہ کرنے میں کسی فتنے کا اندیشہ نہ ہو، اور اگر اِن دونوں میں سے کسی صورت پر عمل نہ ہوسکے تو جگہ میسر ہونے پر اپنی نماز الگ ادا کی جائے


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند