• عبادات >> صلاة (نماز)

    سوال نمبر: 604022

    عنوان:

    صرف نظر آنے والے انگلی کے حصوں پر مسح کیا اور پیروں پر پلاسٹر پر نہ کیا تو وضوء اور نماز کا کیا حکم ہے؟

    سوال:

    ایک خاتون نماز میں قیام، رکوع، سجدہ تو کر لیتی ہیں لیکن گٹھنوں میں تکلیف کی وجہ سے تشہد میں بیٹھنے سے بہت تکلیف ہوتی ہے ، دونوں گٹھنوں کو زمین پر ٹکا کر سجدہ جتنی دیر تو بیٹھنا قابل برداشت ہوتا ہے اس سے زیادہ نہیں ، ان کا سوال ہے کیا وہ سجدہ کے بعد پیچھے رکھی کرسی پر بیٹھ کر تشہد پڑھ سکتی ہیں؟ اگر سجدے کے بعد کرسی پر بیٹھ کر نماز نہیں پڑھی جا سکتی تو کیا صورت اختیار کریں تشہد ک بقدر بیٹھنا بہت دشوار ہے ان کے لئے ؟ کچھ عرصہ بیڈ پر بیٹھ کر نماز پڑھی اس طرح کہ سجدہ بھی میٹرس پر ہوتا تھا سوال یہ ہے کہ کیا مٹرس جو نرم بھی ہے دبنے والا ،اس پر سجدہ ہو جاتا ہے ؟ اور جو نمازیں اس پر پڑھی وہ ادا ہو گئیں یا ان کی قضا کریں؟

    3۔ کچھ نمازیں بیڈ پر بیٹھے ہوئے اس طرح پڑھیں کہ سجدہ سائیڈ ٹیبل پر کرتی تھیں کیا اس طرح نماز ٹھیک ادا ہو جاتی ہے ؟ اور سائیڈ ٹیبل بیڈ سے تھوڑا سا اونچا یا نیچا ہونے سے کوئی فرق پڑتا ہے ؟

    4۔ پاوں پر پلستر چڑھا ہوا تھا صرف انگلیوں کے پورے نظر آرہے تھے وہ وضو کرتے وقت صرف انگلیوں کے نظر آنے والے حصے پر مسح کرتی رہی ہیں کیا وضو ہو گیا یا نہیں؟ اگر نہیں تو اب سب نمازیں دہرائیں گی؟ اگر سجدے کے بعد کرسی پر بیٹھ کر نماز نہیں پڑھی جا سکتی تو کیا صورت اختیار کریں تشہد ک بقدر بیٹھنا بہت دشوار ہے ان کے لئے ؟ 5۔ کیا لکڑی کے جائے نماز جو تخت کی شکل میں ہوتے ہیں چار پاؤں والے ان پر نماز نہیں ہوتی؟ ایک عالمہ کہ رہی ہیں کہ یہ زمین سے متصل نہیں ہوتے اس لیئے نماز جائز نہیں۔ 5۔ کیا لکڑی کے جائے نماز جو تخت کی شکل میں ہوتے ہیں چار پاؤں والے ان پر نماز نہیں ہوتی؟ ایک عالمہ کہ رہی ہیں کہ یہ زمین سے متصل نہیں ہوتے اس لیئے نماز جائز نہیں۔

    جواب نمبر: 604022

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 893-1045/H=01/1443

     (۱، ۲) ایسی صورت میں پیچھے رکھی ہوئی کرسی پر بیٹھ کر تشہد پڑھنے میں کچھ حرج نہیں، نماز ہوجائے گی؛ البتہ کچھ عرصہ بیڈ پر بیٹھ کر جو نمازیں اس طرح پڑھیں کہ بہت نرم گدے پر سجدہ کیا وہ نمازیں درست نہ ہوئیں، ان کی قضاء کرلیں۔

    (۳) ایک بالشت سے کم اونچا ہو تو اس میں کچھ مضائقہ نہیں، تھوڑا سا نیچا بھی رہے تب بھی نماز درست ہوجاتی ہے۔

    (۴) صرف نظر آنے والے انگلی کے حصوں پر مسح کیا اور پیروں پر پلاسٹر پر مسح نہ کیا تو وضوء درست نہ ہوا۔ اس حالت میں جو نمازیں پڑھیں ان کو بھی دوبارہ پڑھ لیں۔

    (۵) لکڑی کی جائے نماز جو تخت کی شکل میں ہوتی ہے اس پر نماز بلاکراہت درست ہوجاتی ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند